Artical

،حیرت انگیز برکات اور کرشمات

Written by admin

جس کے کاموں میں رکاوٹ ہو یا کسی افسر میں کوئی کام ہو اور وہ نہ کرتا ہو تو ہر نماز کے بعد صرف 100 مرتبہ مذکورہ وظیفہ پڑھنے سے اللّٰہ تعالیٰ کے حکم سے کام حل ہو جائیں گے اور افسر مہربان ہو جائے گا۔وظیفہ میں اللہ تعالیٰ کے یہ دو نام ہیں : اللہ اکبر یا عزیزُحضرت سمرہ بن جند ب رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ ُسے روایت ہے،

رسول کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشادفرمایا اللّٰہ تعالیٰ کے نزدیک چار کلمے بہت پیارے ہیں ۔ سُبْحَانَ اللّٰہِ وَالْحَمْدُ لِلّٰہِ وَلَا اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ وَاللّٰہُ اَکْبَر۔حضرت ابو ہریرہ اور ابو سعید خدری رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا سے روایت ہے،رسول کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: جس نے اللّٰہُ اکبر کہا تو اُس کے لئے اِس کے بدلے بیس نیکیاں لکھی جائیں گی اور اُس کے بیس گناہ مٹا دئیے جائیں گے۔

حضرت عبداللّٰہ بن عمر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا فرماتے ہیں : اَللّٰہُ اَکْبَرْ (کہنا) آسمان و زمین کے درمیان کی فضا بھر دیتا ہے۔اس کی شرح میں مفتی احمد یا ر خاں نعیمی رَحْمَۃُاللّٰہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں : اس (کلمے) کا ثواب اس کی عظمت اُن تمام چیزوں کو بھر دیتی ہے، یہ ہمیں سمجھانے کے لیے ہے کہ ہماری کوتاہ نظریں ان آسمان زمین تک ہی محدود ہیں

،ورنہ رب تعالیٰ کی کبریائی کے مقابل آسمان و زمین کی کیا حقیقت ہے۔ایک روایت میں یہ وضاحت ہے کہ قرآن مجید کے بعد سب سے افضل کلمات یہی ہیں ۔ایک حدیث میں ان کو : أَطْيَبُ الْكَلَامِ یعنی سب سے پاکیزہ کلمات فرمایا گیا۔دوسری حدیث میں ان کلمات کو : خَيۡرُ الکَلاَمِ يعنی سب سے بہترین کلمات قرار دیا گیا۔

ذیل میں حسب توفیق ان کلمات کی فضیلت ذکر کی جاتی ہے ۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: یہ چار کلمات اللہ تعالی کو سب سے زیادہ پسند ہیں کوئی حرج نہیں کہ کہیں سے بھی ان کی ابتداء کرلو : سُبْحَانَ اللَّهِ، وَالْحَمْدُ لِلَّهِ، وَلَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ، وَاللَّهُ أَكْبَرُ ۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ساری کائنات سے کہ جس پر سورج طلوع ہوتا ہے مجھے یہ زیادہ پسند ہے

کہ میں: سبحان الله والحمد لله ولا إله إلا الله والله أكبر. کہوں یعنی اللہ پاک ہے، ساری تعریف اللہ ہی کے لیے ہے اور اللہ کے علاوہ اور کوئی معبود برحق نہیں اور اللہ ہی سب سے بڑا ہے۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ایک ایسے درخت کے پاس سے گزرے جس کی پتیاں سوکھ گئی تھیں، آپ نے اس پر اپنی چھڑی ماری تو پتیاں جھڑ پڑیں، آپ نے فرمایا: الحمد لله وسبحان الله ولا إله إلا الله والله أكبر کہنے سے بندے کے گناہ ایسے ہی جھڑ جاتے ہیں

جیسے اس درخت کی پتیاں جھڑ گئیں۔رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: زمین پر جو کوئی بھی بندہ: لا إله إلا الله والله أكبر وسبحان الله والحمدلله ولا حول ولا قوة إلا بالله کہے گا تو اس کے ( چھوٹے چھوٹے ) گناہ بخش دیئے جائیں گے، اگرچہ سمندر کی جھاگ کی طرح ( بہت زیادہ ہی کیوں نہ ) ہوں۔اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔آمین

Leave a Comment