Artical

”شعبان کے پہلے عشرے کا وظیفہ“

Written by admin

شعبان کے با برکت مہینے کی آمد ہو چکی ہے اور اس کے پہلے با برکت عشرے کے اس وظیفے کے ساتھ روحانی عمل حاضرِ خدمت ہے۔ پہلے عشرے کے اس وظیفے سے نہ صرف شعبان کی فضیلت عطا ہو گی بلکہ اللہ کے حکم ہر جائز حاجت بھی پوری ہو گی شعبان وہ مہینہ ہے جس کے بارے میں اللہ کے رسول ﷺ نے ارشاد فر ما یا کہ شعبان میرا مہینہ ہے اور رمضان المبارک اللہ کا مہینہ ہے اس ماہ کے نفلی روزوں کی بھی بہت اہمیت ہے اس ماہ کی عبادات سے انسان اللہ کے بہت قریب ہو جا تا ہے اور اگر انسان اپنی نفسانی خواہشات کو تر ک کر کے صرف خالص اللہ کی عبادت کرے۔

تو اللہ رب العزت کی طرف سے ایسے لوگوں کو خاص انعا مات د ئیے جا تے ہیں آج کے دور میں ہر انسان دولت کے پیچھے بھاگ رہا ہے جس کو دیکھو دولت اور شہرت کا خواہش مند نظر آتا ہے ۔ لوگ اللہ کی رضا تو چاہتے ہیں لیکن دولت کے شرط بھی لگاتے ہیں آج ہم لوگ اس معاشرے میں مذہبی ٹھیکداروں کی ناراضگی سے ڈرتے ہیں لیکن اللہ رب العزت کی ناراضگی سے نہیں ڈرتے ہم قانون سے تو ڈرتے ہیں لیکن اللہ کی طرف سے پیش کئیے گئے قانون جس کا واضح طور پر قرآنِ پاک میں بھی ذکر ہے اس کو دن رات توڑتے رہتے ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ اللہ پاک کے عذاب نازل ہوتے ہیں اور جو بے گناہ ہوتے ہیں۔ وہ بھی ساتھ میں ہی سزا کے حق دار بن جا تے ہیں۔ اللہ کا عذاب اور قہر نازل ہو گا تو وہ چلا ئے گا چیخے گا روئے گا تو اللہ اس بندے سے ارشاد فر ما ئے گا کہ اے حضرت ِ آدم کیا ہم نے تجھے قرآن میں ڈر نہیں سنا یا تھا اور کیا ہم نے تیری طرف نبی نہیں بھیجے تھا تو پھر تو کیوں بھول گیا کہ تو نے ایک دن ہماری طرف لوٹنا ہے ہم سب مسلمانوں کو اس آنے والے دن کی تیاری کر نی چا ہیے اس حوالے سے لوگوں کی مدد کر نی چاہیے ایک حدیث سے مروی ہے کہ حضرت علی ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ فر ما تے ہیں۔

کہ جب شعبان کی پندرہ تاریخ آ جا ئے تو اس رات کو قیام کر و۔ اور دن میں روزہ رکھو۔ اللہ اس رات کو غروبِ آفتاب سے طلوعِ فجر تک ہر انسان کی بخشش فر ما دیتا ہے جو اللہ سے اس رات کو دعا میں طلب کر تا ہے ۔ امید کی جا تی ہے کہ ہمارے سب مسلمان بھائی اور بہنیں اس اہم مہینے کی فضیلت کے اعتبار سے اپنی عبادات کا اہتمام کر یں گے۔ اب آپ کو وظیفہ بتاتے ہیںَ آپ نے عصر اور مغرب کے دوران یہ وظیفہ پڑھنا ہے یعنی جب آپ عصر کی نماز ادا کر یں تو اس کے بعد اپنی جگہ سے نہ اٹھیں اور دعا کے بعد اس وظیفے کو شروع کر یں چاہے آپ مسجد میں ہوں یا گھر پر دونوں جگہ پر وظیفہ کیا جا سکتا ہے۔

Leave a Comment